16

بھاری فیسیں وصول کرنے والے ڈاکٹروں کو ٹیکس نیٹ میں لانے کا فیصلہ

ایف بی آر کے ڈیٹا کے مطابق پی ایم ڈی سی کے بیشتر ممبرز ڈاکٹرز گوشوارے داخل نہیں کر رہے (فوٹو: انٹرنیٹ)

ایف بی آر کے ڈیٹا کے مطابق پی ایم ڈی سی کے بیشتر ممبرز ڈاکٹرز گوشوارے داخل نہیں کر رہے (فوٹو: انٹرنیٹ)

 کراچی: ایف بی آر نے بھاری فیسیں وصول کرنے والے ڈاکٹروں کو ٹیکس نیٹ میں لانے کا فیصلہ کرلیا۔

ایکسپریس کے مطابق ایف بی آر (فیڈرل بورڈ آف ریونیو) کے براڈننگ ٹیکس بیس سیل نے بھاری فیسیں وصول کرنے والے ڈاکٹروں کو بھی اپنے ریڈار پر لے لیا، چھوٹے بڑے تاجروں ایس ایم ای سیکٹر کے ساتھ اب قابل ٹیکس آمدنی کے حامل پیشہ ورانہ شعبوں کو بھی ٹیکس نیٹ میں لایا جائے گا جن میں ڈاکٹرز بھی شامل ہیں۔

ریجنل ٹیکس آفس ٹو کے براڈننگ ٹیکس سیل نے پاکستان میڈیکل اینڈ ڈینٹل کونسل (پی ایم ڈی سی) کو خط ارسال کیا ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ ایف بی آر کے ڈیٹا کے مطابق پی ایم ڈی سی کے بیشتر ممبرز ڈاکٹرز گوشوارے داخل نہیں کر رہے۔

ایف بی آر نے پی ایم ڈی سی سے 10 یوم میں ممبر ڈاکٹرز کی تفصیلات طلب کرلی ہیں۔ ایف بی آر کا کہنا ہے کہ پی ایم ڈی سی کے رکن ڈاکٹرز انکم ٹیکس آرڈیننس کے تحت گوشوارے داخل کرنے کے پابند ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں