478

عمل سے تبلیغ ، اشفاق احمد نے مولانا طارق جمیل کو واقعہ سنایا –

ہماری ایک جماعت ایڈنبرا گئی تو نماز پڑھانے والے نوجوان امام نے سلام پھیراتو چند لڑکیاں قریب آگئیں ، لڑکی نے پوچھا تم انگریزی جانتے ہو؟ کہا جانتا ہوں …… کہا یہ کیا کیا ہے؟ یہ واقعہ مجھے اشفاق احمد نے سنایا تھا ،انہوں نے بتایاکہ میں اور میری بیوی بانو بھی وہاں بیٹھے ہوئے تھے ، میں نے کہا آؤ ہم دیکھتے ہیں ، یہ لڑکیاں اس لڑکے سے کیا کہتی ہیں؟ وہ انگریزی میں امام سے کہنے لگیں یہ تم ے کیا کیا ہے؟ نوجوان نے کہا ہم نے عبادت کی ہے …… وہ کہنے لگیں آج تو اتوار نہیں ہے …… لڑکے نے کہا ، ہم دن میں پانچ مرتبہ کرتے ہیں …… لڑکی کہنے لگی یہ تو بہت زیادہ ہے، لڑکے نے اس پر واضح کیا ، اللہ تعالیٰ کے احسانات کو سامنے رکھا جائے تو یہ بہت تھوڑاہے اور یہی وہ عمل ہے جو سکون کی بہار لاتا ہے یہ تو مشقت نہیں یہ تو راحت ہے ،پھر لڑکی نے ہاتھ بڑھایاسلام کیلئے ،تو نوجوان نے کہا، میں معافی چاہتا ہوں کہ میں اپنا ہاتھ آپ سے نہیں ملا سکتا …… یہ میری بیوی کی امانت ہے …… تو وہ لڑکی کھڑی کھڑی زمین پر گر گئی اس کی چیخ نکلی اور وہ رونے لگی کہ کتنی خوش قسمت ہے وہ بیوی جس کو ایسا خاوند ملا ، کاش یورپ کے مرد بھی ایسے ہوتے اور سسکیاں لیتی ہوئی وہاں سے چلی گئی …… اشفاق احمد اپنی بیوی سے کہنے لگے ، بانو آج وہ تبلیغ ہوئی ہے جو لاکھوں کتابوں سے بھی نہیں ہو سکتی …… آج اس نے ایک عمل سے ایسی تبلیغ کر کے دکھا دی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں